11

فواد چوہدری اور خواجہ آصف میں تلخ کلامی

قومی اسمبلی آج وفاقی بجٹ 2020-21 کی منظوری دے گی، اپوزیشن نے بجٹ منظوری کے دوران احتجاج کی حکمت عملی تیار کر لی۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی اجلاس میں وفاقی وزیر سائنس وٹیکنالوجی فواد چوہدری اور مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماخواجہ آصف میں تلخ کلامی اور تیز جملوں کا تبادلہ ہوا۔

فواد چو ہدری نے کہا کہ اسپیکر صاحب خواجہ آصف سے معافی منگوائیں ،خواجہ آصف اپوزیشن لیڈر کی نشست سے بجٹ پر گفتگو کررہے ہیں ،یہ قومی اسمبلی کے قواعد کی خلاف ورزی ہے،اسپیکر صاحب اس پر آپ رولنگ دیں۔

وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ یہاں بجٹ کی بات ہورہی ہے اور یہ حلقے کے مسائل بیان کررہے ہیں۔

اس پر اسپیکر نے فواد چو ہدری کو جواب دیا کہ ان کی جماعت نے بجٹ پر بات کرنے کیلئے خواجہ آصف کا نام دیا ہے۔

مسلم لیگ ن کے رہنما نے کہا کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ پورے پاکستان کا مسئلہ ہے، اسپیکر صاحب آپ کے چیمبر میں رازدارانہ طور پر آپ کو بتاؤں گا کہ ان کا مسئلہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ وزیراعظم نے گزشتہ روز ارکان اسمبلی کے اعزاز میں عشائیہ دیا اور سب سے الگ الگ ملاقات کی، جس میں ان کے تحفظات اور مسائل سنے۔

وزیراعظم عمران خان نے ارکان اسمبلی کو بجٹ منظوری کے وقت حاضری یقینی بنانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ مشکل حالات میں اور شدید مالی مشکلات کے باوجود ٹیکس فری بجٹ دیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں