36

پنجاب کی ٹیم نالائق اور نااہل ہے، بلاول بھٹو

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ پنجاب کی ٹیم نالائق اور نااہل ہے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب کی ٹیم میں اہلیت نہیں کہ وہ سب سے بڑا صوبہ چلاسکیں، اس حکومت نے پنجاب کی زراعت کو تباہ کردیا ہے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ حکومت کی کوئی ایمرجنسی نظر نہیں آرہی ہمارا کسان ایمرجنسی میں ہے، پاکستان کی فوڈ سکیورٹی کو خطرہ ہوسکتا ہے، پی ٹی آئی کے لوگ خود مانتے ہیں کہ پنجاب میں کرپشن ہورہی ہے۔

انہوں نے اپنی پریس کانفرنس میں کہا کہ مسلم لیگ ن کے وفد سے ملاقات میں مختلف آپشنز پر بات ہوئی، عید کے بعد ہونے والی اے پی سی پر کام شروع ہوگیا ہے، عوامی مفادات جمہوریت کےلیے ایجنڈا بنایا جارہا ہے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ مالم جبہ،بلین ٹری کرپشن کا یہ لوگ جواب دینے کو تیار نہیں، حکومت کے رہنے کا کوئی جواز نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد نیب کے رہنے کا بھی کوئی جواز نہیں ہے۔

اُن کا کہنا ہے کہ شہباز شریف کی صحت یابی کے بعد اے پی سی ہوگی، ن لیگ سے اے پی سی پر تفصیلی بات چیت ہوئی ہے۔ جو وزیر اعلیٰ پوچھتا ہے کہ کورونا کیسے کاٹتا ہے توصوبے کا حال یہ ہی ہوگا۔

بلاول نے کہا کہ پنجاب پاکستان کا سب سے بڑا صوبہ ہے، غیر تربیت یافتہ لوگ حکومت کررہے ہیں، اگر پنجاب کی زراعت کو نقصان ہوگا تو پورے پاکستان کی فوڈ سیکیورٹی پر اثر ہوگا، وفاق اور پنجاب حکومت نے لوگوں کی زندگیوں کو خطرے میں ڈال دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کو لانے والوں کو کرپشن فری پاکستان بنانا تھا تو کیا آج پاکستان کرپشن فری ہے؟ ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کا کہنا ہے پی ٹی آئی حکومت کرپٹ ترین حکومت ہے توان کو لانے کا کیا فائدہ؟

بلاول نے کہا کہ عمران خان کہتے ہیں ڈاکٹرز جہاد کر رہے ہیں تو خان صاحب ڈاکٹرز کو ان کا حق کیوں نہیں دیتے؟ عمران خان صاحب طبی عملے کو آپ کی تقریروں کی ضرورت نہیں بلکہ ان کورسک الاؤنس دیں۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کا کچن چلانے کے لیے کرپشن کی جارہی ہے، نیب صرف مخالفین کے خلاف استعمال ہورہی ہے، چیئرمین نیب میں کوئی شرم اور حیا ہے تو استعفیٰ دے کر گھر چلے جائیں اور نیب کو تالا لگا دیں۔

بلاول نے کہا کہ نیب کا قانون کالا قانون ہے، سیاسی انجنیئرنگ کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ نیب کو ختم کریں، بند کردیں۔ بلاتفریق احتساب کے لیے سیاسی جماعتوں کو قانون سازی کرنی چاہیے۔

اُن کا مزید کہنا ہے کہ جب سلیکٹڈ حکومت لائی جاتی ہے تو جمہوریت، معیشت اور معاشرے کا یہ ہی حال ہوتا ہے جو آج ہے، حکومت کے میگا کرپشن پر نیب کوئی کارروائی نہیں کررہا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں