اگلے سال جنوری تک فائیو جی سروس شروع کردینگے،امین الحق

حیدرآباد: وفاقی وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی سید امین الحق نے کہا ہے کہ رواں سال ماہ دسمبر یا پھر آنیوالے سال جنوری تک پاکستان میں فائیو جی سروس شروع ہوجائے گی۔حیدرآباد کے مقامی ہوٹل میں نیشنل انکیوبیشن سینٹر کے قیام کے متعلق سندھ یونیورسٹی کے ساتھ ہونے والے معاہدے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر آئی ٹی سید امین الحق نے کہا کہ شہر کے قلب میں 13 ہزار اسکوائر فٹ پر محیط ایلسا قاضی کیمپس میں رواں سال موسم گرما تک سینٹر کا قیام کیا جائے گا، اس حوالے سے ہونے والے معاہدے پر وزارت آئی ٹی کے ادارے اگنائٹ کے چیف ایگزیکٹیو عاصم شہریار حسین اور سندھ یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر محمد صدیق نے دستخط کیے۔
امین الحق کا کہنا تھا کہ نیشنل انکوبیشن سینٹر کے قیام سے حیدرآباد اور اس کے گردو ونواح کے نوجوانوں کو ایک ایسا پلیٹ فارم میسر آئے گا جہاں سے وہ دنیا کو اپنی تخلیقی صلاحیتوں سے روشناس کرانے کے علاوہ پرکشش آمدنی کے ذریعے ایک بہترین مستقبل کی بنیاد رکھ سکیں گے، حکومت پاکستان کے ڈیجیٹل پاکستان کے وژن کو آگے بڑھانے اور کاروباری افراد کو سازگار ماحول کی فراہمی کے لیے مزید چھوٹے شہروں میں نیشنل انکوبیشن سینٹرز کا قیام ترجیحات میں شامل ہے۔
وفاقی وزیر نے کہا کہ اس وقت پاکستان میں موبائل فون صارفین کی تعداد 188 ملین، تھری جی اور فورجی جی استعمال کرنے والوں کی تعداد 107 ملین جبکہ براڈ بینڈ صارفین کی تعداد 110 ملین سے تجاوز کرچکی ہے جبکہ ٹیلی کام سیکٹر میں ایک ارب 20 کروڑ ڈالرز کی براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری ہوئی ہے، فورجی تیزی سے آگے پھیل رہا ہے اورہمارا اگلا ہدف فائیو جی ہے۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان نےکوروناا ور دنیا بھر کی خراب معاشی صورتحال کے باوجودسال 2021 میں نمایاں اقتصادی ترقی حاصل کی جس میں آئی ٹی ایکسپورٹ نمایاں رہیں ہیں، اسٹیٹ بینک اور سیکیورٹی ایکسچینج کمیشن بھی اسٹارٹر کے کلچر کو فروغ دینے میں مکمل تعاون کررہا ہے جس کی وجہ سے آئی ٹی سیکٹر میں سرمایہ کاری بڑھ رہی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں