پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر مظاہرے میں مسلح شخص دیکھ کر پولیس کی دوڑیں لگ گئیں

اسلام آباد: پارلیمنٹ کے باہر مسلح شخص مفتی کفایت اللہ کا گارڈ نکلا، جسے اسلحہ لہرانے پر پولیس نے گرفتار کر کے تھانہ منتقل کردیا۔ ذرائع کے مطابق منی بجٹ بل کے خلاف اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا جارہا ہے، مظاہرے کے دوران ایک مسلح شخص کلاشنکوف لے کر مظاہرے میں گھس گیا، جسے دیکھ کر پولیس اہلکاروں میں شدید تشویش پھیل گئی اور مسلح شخص کی گرفتاری کے لئے پولیس کی دوڑیں لگ گئیں۔
ذرائع کے مطابق پولیس نے بڑی تگ و دو کے بعد مسلح شخص کو پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر سے گرفتار کرلیا، تاہم بعد میں پتہ چلا کہ مسلح شخص مفتی کفایت اللہ کا گارڈ تھا، جسے اسلحہ لہرانے پر پولیس نے گرفتار کر کے تھانہ منتقل کردیا۔ پولیس حکام کا کہنا ہے کہ گرفتار شخص کو اسلحہ کی نمائش پر گرفتار کیا گیا، پارلیمنٹ کے باہر لائسنس یافتہ اسلحہ کی نمائش بھی ممنوع ہے۔
دوسری جانب جے یو آئی کے رہنما مولوی کفایت اللہ کے اپنے گارڈ کی گرفتاری کے خلاف شاہراہ دستور پر دھرنا دے دیا ہے اور ان کے ساتھ ان کے درجنوں کارکنان بھی ساتھ ہیں، دھرنے کےسبب ٹریفک جام ہونے سے پارلیمنٹ ہاؤس کے سامنے گاڑیوں کی قطاریں لگ گئی ہیں۔ مفتی کفایت اللہ کا کہنا ہے کہ میرے گارڈ کو غیر قانونی طور پر حراست میں لیا گیا ہے، پولیس والے گارڈ کو رہا کریں اور معافی بھی مانگیں، جب تک ہماری بات نہیں مانی جاتی شاہراہ دستور پر دھرنا جاری رہے گا۔ جس پر پولیس نے مفتی کفایت اللہ کے گارڈ کو چھوڑ دیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں