’ایف آئی اے مجھے ایک نہیں 4 خط لکھے، رائیگاں ہی جائیں گے‘

معروف ٹک ٹاکر حریم شاہ نے اپنے خلاف منی لانڈرنگ کی انکوائری کرنے والے وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کی جانب سے لکھے گئے خط پر رد عمل کا اظہار کیا ہے۔سوشل میڈیا پر حریم شاہ کا ایک ویڈیو انٹرویو وائرل ہے جس میں انھیں ایف آئی اے کی جانب سے اکاؤنٹ منجمد کیے جانے کے حوالے سے لکھے گئے خط سے متعلق بات کرتے دیکھا جاسکتا ہے۔حریم کا کہنا ہے کہ مجھے میڈیا کے ذریعے ہی علم ہوا کہ ایف آئی اے نے مجھے اکاؤنٹ منجمد کیے جانے سے متعلق خط لکھا ہے جس کے بعد میڈیا نے بہت شور شرابا کیا اور ’ حریم شاہ پھنس گئی ہے‘ جیسے جملوں کے ذریعے میرا میڈیا ٹرائل کرنے کی کوشش کی۔
ٹک ٹاکر نے ایف آئی اے کے خط پر مزید کہا کہ’ میں کہتی ہوں ایف آئی مجھے شوق سے خط لکھے، ایک نہیں 3 ،4 خط اور لکھے کیوں کہ یہاں بھی وہی ہوگا جو(نیشل کرائم ایجنسی) این سی اے کو لکھے گئے خط پر ہوا تھا جس کی اب تک کوئی کارروائی نہیں ہوئی لہٰذا ایف آئی اے کا لکھا گیا یہ خط بھی رائیگاں جائے گا۔حریم شاہ نے گفتگو میں ہنستے ہوئے مزید کہا کہ جس نے بھی محنت سے لفظوں کا چناؤ کرکے یہ خط لکھا ہے وہ رائیگاں نہیں جانا چاہیے۔ خیال رہے کہ چند روزقبل حریم شاہ کے خلاف منی لانڈرنگ کی انکوائری کرنے والے ایف آئی اے نے ٹک ٹاکر کے بینک اکاؤنٹس منجمد کرنے کے لیے خط لکھا تھا۔ذرائع کے مطابق ٹک ٹاک اسٹار حریم شاہ کے پاکستان میں 2 بینک اکاؤنٹس ہیں جن میں ایک کھاتہ بینک آف پنجاب کی لاہور برانچ میں ہے جبکہ دوسرا اکاؤنٹ حبیب بینک کی کراچی برانچ میں ہے۔
خیال رہے کہ حریم شاہ نے چند دن پہلے لندن پہنچ کرغیرملکی کرنسی کے بنڈلز کے ساتھ ایک ویڈیو بنائی تھی، ویڈیو میں حریم شاہ کے پاس بھاری غیرملکی کرنسی دیکھی گئی تھی۔ویڈیو میں حریم شاہ نے کہا کہ تھا کہ وہ یہ رقم پاکستان سے لیکر بیرون ملک گئی ہیں، ویڈیو میں پاکستانی اداروں کا تمسخر بھی اڑایا گیا تھا۔
بعد ازاں ایف آئی اے نے ویڈیو کا نوٹس لیتے ہوئے منی لانڈرنگ قانون کے تحت انکوائری شروع کرنے کا اعلان کر دیا تھا تاہم اسی روز حریم شاہ نے اس ویڈیو کو ایک مذاق قرار دیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں