غیر خاتون کو بذریعہ فون سلام اورگڈ مارننگ بھی ہراسگی ہے: کشمالہ خان

کراچی: وفاقی محتسب انسداد ہراسگی کشمالہ خان نے کہا ہےکہ غیر خاتون کو بذریعہ فون سلام اورگڈ مارننگ بھی ہراسگی ہے۔وفاقی محتسب انسدادہراسگی کشمالہ خان نے ڈاؤ یونیورسٹی میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ غیر خاتون کو کسی بھی طرح چھونا ہراسگی ہی ہے، غیر خاتون کو بذریعہ فون سلام اور گڈ مارننگ بھی ہراسگی ہے جب کہ غیرخاتون کوگھورنا بھی ہراسگی ہے، اس پر کئی افرادکو نوکری سے نکالا گیا ہے۔
کشمالہ خان کاکہنا تھا کہ بس اسٹاپ پر خواتین کی موجودگی میں سیٹی بجانا بھی ہراسگی ہے، جنسی ہراسانی کیس میں فریقین کو سامنے بٹھا کر سماعت کی جائے، ہراسانی کے 4 ہزار کیسز کی سماعت کی جن میں سے 99 فیصد سے زائد کیسز میں خواتین سچی نکلیں البتہ امکان تو ہوتا ہے مگر انسداد ہراسیت کے قانون کا غلط استعمال نہیں ہورہا۔انہوں نے مزید کہا کہ خواتین کوپنجاب،کے پی اور اسلام آباد میں جائیداد میں وراثت کا حق ہے، جائیداد میں خواتین کی وراثت کیلئے سندھ اور بلوچستان میں قانون سازی نہیں کی گئی۔کشمالہ خان کا کہنا تھا کہ ڈاؤیونیورسٹی سے ایک سال میں ہراسگی کی کوئی شکایت نہیں آ ئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں