تحریک عدم اعتماد، ایم کیو ایم نے وزیراعظم سے دو بڑے مطالبات کردیے

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے کراچی میں ایم کیو ایم پاکستان کے عاضی مرکز بہادرآباد کا دورہ کیا جس میں اتحادی جماعت نے وزیراعظم کے سامنے دو بڑے مطالبات رکھ دیے۔ذرائع کے مطابق ایم کیو ایم کی جانب سے بند دفاتر کھولنے اور لاپتہ افراد کو بازیاب کروانے کے دو مطالبات رکھے گئے جبکہ وزیراعظم سے ایم کیو ایم رہنماؤں کی کراچی پیکج پر بھی بات ہوئی۔عمران خان کا بطور وزیراعظم ایم کیو ایم پاکستان کے عارضی مرکز کا پہلا دورہ تھا۔ وفاقی وزراء علی زیدی، اسد عمر، شاہ محمود قریشی اور گورنر سندھ عمران اسماعیل وزیراعظم کے ہمراہ تھے۔ارکانِ سندھ اسمبلی پی ٹی آئی کا کہنا تھا کہ ملاقات بہت خوشگوار ماحول میں ہوئی۔کچھ دیر کی ملاقات کے بعد وزیراعظم عمران خان بہادرآباد مرکز سے واپس روانہ ہوگئے۔ وزیراعظم نیشنل اسٹیڈیم سے بذریعہ ہیلی کاپٹر گورنر ہاؤس پہنچیں گے۔
واضح رہے کہ تحریک عدم اعتماد کے حوالے سے جہاں اپوزیشن جماعتیں متحرک ہیں وہیں وزیراعظم عمران خان نے بھی اتحادی جماعتوں سے رابطے تیز کر دیے ہیں۔عمران خان نے گزشتہ ہفتے مسلم لیگ ق کے قائدین چوہدری براردران سے اُن کی رہائش گاہ پر ملاقات کی تھی جس کے بعد وزیرقانون بیرسٹر فروغ نسیم نے ایم کیو ایم مرکز کے دورے کی نوید بھی سنائی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں