اسلام آباد راولپنڈی میں حالات معمول پر آنا شروع

عمران خان کا لانگ مارچ ختم ہونے کے بعد جڑواں شہروں میں حالات معمول پر آنا شروع ہوگئے۔راولپنڈی کی شاہراہوں سے ڈائیورشن اور سیلنگ پوائنٹس ختم کرنےکا عمل جاری۔تمام ڈائیورشن اور سیلنگ پوائنٹس کو کھولا جا رہا ہے۔ٹریفک پولیس کے مطابق اولڈ ائیر پورٹ روڈ سے کنٹینر ہٹا کر ٹریفک کو رواں کر دیا گیا ہے۔ جبکہ سواں پل دونوں سائیڈوں سے کنٹینر ہٹائے جا رہے ہیں۔ٹریفک پولیس زرائع کا کہنا ہے کہ حیدر روڈ ٹرن اور مریڑ چوک سے ڈائیورشن ختم کرکے ٹریفک کےلئے کھول دیا گیا ہے۔شاہین چوک راول روڈ سے بھی ڈائیوریشن ختم کر کے ٹریفک کے لیے کھول دیا گیا۔کمیٹی چوک ،چاندنی چوک ،سکستھ روڈ اور ڈبل روڈ سے بھی ڈائیورشن ختم کر دی گئی ہیں۔
مری روڈ کو ہر طرح کی ٹریفک کےلئے کھول دیا گیا ہے۔ٹریفک پولیس کے مطابق اسلام آباد بلیو ایریا سے پی ٹی آئی کارکن قافلوں کی صورت میں واپس روانہ ہوگئے۔ ٹرانسپورٹ نہ ہونے کی وجہ سے واپس جانے والے کارکنوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔انتظامیہ و پولیس نے مری روڈ سمیت دیگر شاہراہوں کو ٹریفک کے لیے کھولنے کےلیے رکاوٹیں ہٹانا شروع کردیں۔ مری روڈ پر چاندنی چوک سے کنٹینرز ہٹا کر شاہراہ کو کھول دیاگیا جبکہ کاروباری مراکز بھی کھلنے لگے۔
اسلام آباد بلیو ایریا میں پی ٹی آئی کارکنوں نے جھڑپوں کے دوران املاک کو شدید نقصان پہنچایا اور آگ لگائی جس سے درجنوں درخت اور پودے جھلس کر مرجھاگئے جبکہ ٹیلی فون تاروں کو بھی جلایا گیا۔ڈی چوک کچرا کنڈی کا منظر پیش کر رہا ہے۔ ہر طرف کاغذ ، جوس کے ڈبے ، درختوں کی شاخیں اور پتے بکھرے پڑے ہیں۔ کھانے پینے کی اشیا کا کچرا پھیلا ہوا ہے۔مرکزی شاہراہ پر ہر طرف گندگی کے ڈھیر لگے ہیں۔ سی ڈی اے سمیت دیگر محکموں نے بحالی کا کام شروع کردیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں