حکومتی اتحاد نے چیئرمین نیب کیلئے جسٹس (ر) مقبول باقر کے نام پر اتفاق کرلیا

اسلام آباد: حکومتی جماعتوں نے چیئرمین نیب کے لیے سپریم کورٹ کے سابق جج جسٹس (ر) مقبول باقر کے نام پر اتفاق کرلیا.ذرائع کے مطابق حکمراں جماعت مسلم لیگ نون، پیپلزپارٹی سمیت دیگر اتحادی جماعتوں کی چیئرمین نیب کے چیئرمین کی تقرری کے حوالے سے مشاورت ہوئی، جس میں جسٹس (ر) مقبول باقر کے نام پر اتفاق ہوا۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ جسٹس مقبول باقر کا نام وزیراعظم شہباز شریف اور پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری کی ملاقات کے بعد زیر غور آیا ہے۔ اگر اپوزیشن لیڈر راجا ریاض کو جسٹس (ر) مقبول باقر کے نام پر کوئی اعتراض نہیں ہوا تو انہیں ہی اگلا چیئرمین نیب لگایا جائے گا۔
سابق جج مقبول باقر سندھ ہائیکورٹ سے سپریم کورٹ میں پروموٹ ہوئے تھے اور انکے بطور جج کردار پر کبھی کوئی داغ نہیں۔قبل ازیں چیئرمین نیب کے لئے پانچ نام زیر غور تھے جن میں جسٹس (ر) مقبول باقر کے علاوہ جسٹس (ر)دوست محمد،سابق ڈی جی آئی بی آفتاب سلطان، سابق وفاقی سیکرٹری اخلاق تارڑ اور اور سابق اٹارنی جنرل عرفا ن قادر شامل تھے۔دوسری جانب موجودہ چیئرمین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال پیپلزپارٹی، ن لیگ سمیت تمام جماعتوں سے کہہ رہیں کہ مجھے ہی عہدہ پر برقرار رکھاجائے میں ہر طرح کے تعاون کو تیار ہوں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر کے درمیان اتفاق کے بعد چیئرمین نیب کے نام کی سمری صدر کو ارسال کردی جائے گی۔
یاد رہے کہ موجودہ چیئرمین جسٹس (ر) جاوید اقبال کے عہدے کی مدت 2 جون کو ختم ہورہی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں