مقدمہ جیتنے کے بعد جونی ڈیپ کا پہلا بیان آگیا

ہالی وڈ کے مایا ناز اداکار جونی ڈیپ کا سابقہ اہلیہ اداکارہ ایمبر ہرڈ کے خلاف ہتک عزت کا مقدمہ جیتنے کے بعد پہلا بیان سامنے آگیا۔6 ہفتے پر مشتمل مقدمے کی سماعت میں دونوں فریقین کی جانب سے ایک دوسرے پر سنگین الزامات لگائے گئے تاہم فیصلہ اداکار جونی ڈیپ کے حق میں آیا جس کے بعد انہوں نے سوشل میڈیا پر اپنا پہلا بیان جاری کیا۔
جونی ڈیپ نے اپنے بیان میں کہا کہ ’6 سال پہلے پلکیں جھپکتے ہی میری زندگی سمیت میرے بچوں، قریب ترین لوگوں اور ان افراد کی زندگیاں جنہوں نے کئی سالوں سے میرا ساتھ دیا اور مجھ پر یقین کیا، ہمیشہ کے لیے بدل گئیں۔‘
اداکار نے لکھا کہ ’میڈیا کے ذریعے مجھ پر مجرمانہ، بے بنیاد اور سنگین نوعیت کے الزامات لگائے گئے جس سے نفرت انگیز مواد کے سلسلے کا آغاز ہوا جس نے میرے کیرئیر اور زندگی کو متاثر کیا’۔
جونی نے عدالت کے فیصلے پر لکھا کہ ‘اب 6 سال بعد جیوری نے مجھے میری زندگی واپس لوٹا دی ہے جس کے لیے میں ان کا بے حد شکرگزار ہوں۔’اداکار نے مزید کہا کہ ’مجھے معلوم تھا کہ اس کیس کے دوران مجھے کن مشکلات اور رکاوٹوں کا سامنا کرنا پڑے گا اور یہ سب میری زندگی پر کیسے اثرات مرتب کرے گا، اس کیس کو عدالت میں لانے کا میرا مقصد ابتداء سے ہی حقیقت کو ظاہر کرنا تھا، پھر چاہے نتیجہ میری سوچ کے برعکس ہی کیوں نہ ہوتا’۔
انہوں نے کہا کہ ’بہتری ابھی آنا باقی ہے اور آخر کار ایک نیا باب شروع ہو گیا ہے، سچائی کبھی ختم نہیں ہوتی۔‘
بیان کے اختتام پر اداکار نے اپنے تمام چاہنے والوں کا تہہ دل سے شکریہ ادا کیا۔
واضح رہے کہ جونی ڈیپ اور ان کی سابقہ ​​اہلیہ ایمبر ہرڈ 11 اپریل کو ورجینیا میں شروع ہونے والے ہتک عزت کے مقدمے میں ایک دوسرے پر جسمانی اور جذباتی زیادتی کا الزام لگارہے تھے۔جونی ڈیپ نے اپنی سابقہ اہلیہ پر 50 ملین ڈالر کا مقدمہ دائر کیا تھا جس کے بعد ہرڈ نے اداکار کے خلاف 100 ملین ڈالر کا مقدمہ دائر کردیا، دونوں کا دعویٰ تھا کہ ایک دوسرے نے انہیں بدنام کیا۔
تاہم اب جونی ڈیپ نے اپنی سابقہ اہلیہ ایمبر ہرڈ کے خلاف ہتک عزت کا مقدمہ جیت لیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں