آئی ایم ایف کی غلامی سے فوری نجات ممکن نہیں، وزیر قانون

اسلام آباد: وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ نے سینیٹ اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا ہے کہ عالمی مالیاتی ادارے آئی ایم ایف کی غلامی سے راتوں رات نکلنا ممکن نہیں ہے۔ لہذا ملک کو انتشار کی جانب لے جانے کے بجائے مسائل کا حل تلاش کیا جائے۔سینیٹ میں قائد ایوان نے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ ایوان کو جلسہ گاہ نہیں بنانا چاہیے، اگر ایسی ہی باتیں کرنی ہیں تو زبان ہم بھی چلا سکتے ہیں۔ انہوں نے سابقہ حکومت کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ چار برس میں یہ ملک کو ڈیفالٹ چھوڑ کر گئے ہیں۔ معیشت کا بیڑا غرق کیا جا چکا ہے۔ دامن آپ کا بھی صاف نہیں ہے۔ حکومت جانے کا یہ مطلب تو نہیں کہ جان چلی گئی۔
انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف کی زنجیریں انہوں نے ہی ہم پر ڈالی ہیں، یہ بھگوڑے ہیں اور جھوٹ پر جھوٹ بولے جا رہے ہیں۔ اعظم نذیر تارڑ نے کہا کہ اشتہاری اور بناوٹی باتیں چھوڑ کر سنجیدگی کا مظاہرہ کرنا ہوگا، ٹھنڈے دل کے ساتھ کام کریں گے تو انتشار سے بچ سکیں گے۔
سینیٹ میں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر قانون کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف کی غلامی سے فوری نجات ممکن نہیں، لیکن ہم سب کو مل کر پاکستان کو بہتر بنانا ہے۔ سب کو پتا ہے کہ سبسڈی واپس لینے کی وجوہات کیا ہیں۔ عوام کو سبسڈی دینے کے معاملات وزیر اعظم کی میز پر ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں