ایشیاکپ 2022؛ سری لنکا کو 50 لاکھ ڈالر سے زائد کا نقصان ہوسکتا ہے، رپورٹ

کولمبو: سری لنکن کرکٹ بورڈ کا کہنا ہے کہ ایشیاکپ منتقل ہونے کی صورت میں 50 لاکھ ڈالر سے زائد کا نقصان ہوسکتا ہے۔کرکٹ ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق سری لنکن کرکٹ بورڈ کے سربراہ ایشلے ڈی سلوا کا کہنا ہے کہ پاک بھارت کرکٹ ٹیموں کی میزبانی سے ہمیں بڑی آمدنی متوقع ہے، اس لیے کوشش کررہے ہیں کہ ایونٹ کی میزبانی سری لنکا کے پاس ہی رہے۔ایشلے ڈی سلوا نے کہا کہ ’’ہمارا ملک اس وقت معاشی بحران کا شکار ہے جبکہ ملک میں آنے والا ہر ڈالر ہمارے لیے اہم ہے۔ بھارتی کرکٹ بورڈ کے سیکریٹری جے شاہ ہمیں یقین دلایا ہے کہ اگر سب صحیح رہا تو ایونٹ کی مزبانی سری لنکا ہی کرے گا‘‘۔
دوسری جانب آسٹریلوی ٹیم دورہ سری لنکا کے لیے کولمبو میں موجود ہے، جس کے باعث آئی لینڈرز کے ایشیاکپ میزبانی کے امکانات روشن ہوگئے ہیں۔آئی سی سی کے پانچ مکمل رکن ممالک بھارت، پاکستان، سری لنکا، بنگلہ دیش اور افغانستان نے براہ راست مین ایونٹ کے لیے کوالیفائی کرلیا ہے جبکہ ایک ملک کوالیفائنگ راؤنڈ کے ذریعے شامل ہوگا۔واضح رہے کہ رواں سال ایشیاکپ ٹی20 فارمیٹ پر مشتمل ہوگا جبکہ ایونٹ 27 اگست سے 11 ستمبر تک سری لنکا میں کھیلا جانا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں