پبلک اکاؤنٹس کمیٹی: آئی پی پیز کے تمام معاہدوں کی تفصیلات طلب

اسلام آباد: پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے آئی پی پیز کے تمام معاہدوں کی تفصیلات طلب کرلیں۔چیئرمین نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) نے پبلک اکاؤنٹس کمیٹی میں پیش ہوکر بتایا کہ ڈسکوزکو 13 فیصد لائن لاسزکی رعایت ہے مگر عملاً بجلی کا نقصان17 فیصد ہے، کیسکو میں 65 فیصد بجلی چوری ہورہی ہے۔چیئرمین نیپرا نے بتایاکہ بجلی صارفین کونیٹ میٹرنگ کی سہولت دینے سے نقصان ہورہا ہے، صارفین اپنی بجلی بھی پیدا کررہے ہیں اور بیچ بھی رہے ہیں، حکومت کا پریشرہے کہ صارفین سے بجلی لے رہے ہیں، ہمیں نقصان ہے۔چیئرمین نیپرا نے مزید بتایا کہ 41 ہزار میگاواٹ بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت موجود ہے، اس پر ممبر کمیٹی نے سوال کیا کہ اگر41 ہزارمیگاواٹ بجلی بنانےکی صلاحیت ہے تو لوڈشیڈنگ کیوں ہورہی ہے؟ اس پر چیئرمین نے کہا کہ بجلی بنانے کی صلاحیت ہے لیکن بدقسمتی سے فیول کی کمی کا شکارہیں۔چیئرمین پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نور عالم خان نے کہا کہ بعض آئی پی پیزکوبجلی استعمال نہ کرنے کے باوجود پیسے دیے جارہے ہیں، جب عوام بجلی لے نہیں رہے تو آئی پی پیزکوپیسے کیوں دیں؟
چیئرمین نیپرا نے بتایا کہ آئی پی پیز کے ساتھ سی پی پی اےکپیسٹی پیمنٹ چارجزکے معاہدےکرتی ہے۔
بعد ازاں پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے آئی پی پیز کے تمام معاہدوں کی تفصیلات طلب کرلیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں