ٹوئٹر کے اہم شراکت دار کی مسک کی ‘خطرناک’ تبدیلیوں کی مذمت، علیحدگی کا عندیہ

دنیا بھر کے مقبول سوشل میڈیا پلیٹ فارم ٹوئٹر کے اہم خیراتی شراکت داروں میں سے ایک نے ایلون مسک کی جانب سے پالیسی میں تبدیلیوں کی مذمت کرتے ہوئے سوشل میڈیا پلیٹ فارم سے اپنی راہیں جدا کرنے پر غور شروع کر دیا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق اینٹی ڈیفیمیشن لیگ (اے ڈی ایل) کے سی ای او کا کہنا ہے کہ ٹوئٹر کے بانی ایلون مسک کا امریکا کے سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا اکاؤنٹ دوبارہ بحال کرنے کا اقدام حیران کن اور خطرناک ہے۔
انہوں نے اپنے خدشات ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ٹوئٹر نے مشہور امریکی ریپر کین ویسٹ کا اکاؤنٹ بھی دوبارہ بحال کرنے کی اجازت دے دی ہے۔
اے ڈی ایل کے مطابق یکم نومبر کو ایلون مسک نے سول رائٹس گروپ سے ملاقات کی تھی تاکہ انہیں یقین دہانی کرائی جائے کہ کسی بھی فرد کے پہلے سے معطل کردہ اکاؤنٹ کو اس وقت تک بحال نہیں کیا جائے گا جب تک وہ سول سوسائٹی کے خیالات کو مدنظر رکھتے ہوئے شفاف عمل کو اپنا نہیں لیتا۔
میڈیا رپورٹس کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ اور کین ویسٹ سمیت دیگر متنازع شخصیات کے ٹوئٹر اکاؤنٹس کی بحالی کے بعد ایک اشتہاری کمپنی نے بھی ٹوئٹر کے ساتھ اپنے مستقبل پر شکوک و شبہات کا اظہار کیا ہے۔
کمپنی کا کہنا ہے کہ کمپنی اور سول رائٹس گروپ اور تنظمیوں کے ساتھ ایک بہترین تعلقات رہے ہیں جن میں اے ڈی ایل سمیت اے ڈی کلر اور این اے اے سی پی بھی شامل ہیں۔
واضح رہے کہ ٹوئٹر نے گزشتہ برس جنوری میں عوام کو تشدد پر اکسانے کے پیش نظر ڈونلڈ ٹرمپ کا اکاؤنٹ معطل کیا تھا جبکہ امریکی ریپر کین ویسٹ کا اکاؤنٹ یہودی مخالف پوسٹ کی وجہ سے بند کر دیا گیا تھا تاہم ایلون مسک نے حال ہی میں عوامی رائے کے بعد دونوں اکاؤنٹس کو بحال کر دیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں