10

آسیہ بی بی کے وکیل سیف الملوک کو زبردستی ملک سے باہر نہیں بھیجا، اقوام متحدہ کی تردید

ہیگ:آسیہ بی بی کے وکیل سیف الملوک نے کہا ہے کہ وہ اب ہالینڈ ہی میں رہنا چاہتے ہیں۔ قبل ازیں انہوں نے کہا تھا کہ اقوام متحدہ اور یورپی سفیروں نے انہیں زبردستی ملک سے باہر بھیجا تھا۔پاکستانی سپریم کورٹ کی طرف سے توہین مذہب کے الزام میں قید مسیحی خاتون آسیہ بی بی کی سزائے موت کو ختم کرنے کے بعد ملک بھر میں احتجاج اور ہنگاموں کا سلسلہ شروع ہو گیا تھا۔ ان حالات میں آسیہ بی بی کے وکیل سیف الملوک پاکستان چھوڑ کر ہالینڈ پہنچ گئے تھے۔ ہالینڈ کے دارالحکومت دی ہیگ میں نیوز کانفرنس کے دوران سیف الملوک نے کہا تھا کہ انہیں”ان کی مرضی کے بغیر جہاز پر سوار کرایا گیا“ تھا، حالانکہ وہ اپنی موکلہ کی جیل سے رہائی سے قبل ملک چھوڑنے پر تیار نہیں تھے۔پاکستانی سپریم کورٹ کی طرف سے توہین مذہب کے الزام میں قید مسیحی خاتون آسیہ بی بی کی سزائے موت کو ختم کرنے کے بعد ملک بھر میں احتجاج اور ہنگاموں کا سلسلہ شروع ہو گیا تھا۔تاہم اس کے برخلاف انہوں نے کہا، ”اگر انسانی حقوق کا دفاع کرنے والا ملک ہالینڈ میری مدد نہیں کرتا اور مجھے پناہ نہیں دیتا تو پھر میں پاکستان لوٹ کر قتل ہو جانے کو ترجیح دوں گا۔“ہالینڈ کی وزارت خارجہ کے ایک ترجمان نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا کہ اس بات کا جائزہ لیا جائے گا کہ آیا سیف الملوک کی ’عارضی مدد‘ کی جا سکتی ہے۔قبل ازیں منگل کے روز ہی اقوام متحدہ کی طرف سے سیف الملوک کے دعوے کی تردید کی گئی۔ اقوام متحدہ کی ترجمان ایری کانیکو کے مطابق، ”پاکستان میں اقوام متحدہ نے مسٹر ملوک کی درخواست پر مدد فراہم کی تھی اور ان کی مرضی کے خلاف انہیں ملک چھوڑنے پر مجبور نہیں کیا تھا، اور نہ ہی اقوام متحدہ کسی کو اس کی مرضی کے خلاف پاکستان چھوڑنے پر مجبور کر سکتا ہے۔“

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں