7

امریکی اسلحہ کی دوسرے ملکوں کو فروخت میں 33 فیصد اضافہ

واشنگٹن: مالی سال 2018 ءمیں امریکی اسلحہ کی فروخت میں 33 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ امریکی محکمہ خارجہ نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ مالی سال 2018ءمیں (یکم اکتوبر 2017 سے 30 ستمبر 2018 ) تک دیگر ممالک کو فروخت کئے جانے والے اسلحہ کی فروخت میں 33 فیصد کا اضافہ ہوا ہے جس کی مالیت 55.66 بلین امریکی ڈالر ہے جبکہ گزشتہ مالی سال کے دوران 41.93 بلین ڈالر کا اسلحہ فروخت کیا گیا تھا۔ امریکی اسلحے کے بڑے خریداروں میں سعودی عرب،کویت،پولینڈ،بحرین اور متحدہ عرب امارات شامل تھےجن میں سےسعودی عرب نے8.1 بلین ڈالر کی خریداری کی ہے۔سعودی عرب کی جانب سے خریدے گئے اسلحے میں جنگی بحری جہاز، پیٹریاٹ ایئر اورمیزائل دفاعی نظام شامل ہیں۔ محکمہ خارجہ کے بیان کے مطابق 2018 میں مجموعی طور پر امریکی اسلحہ کی برآمدات، حکومت سے حکومت اور براہ راست کمرشل فروخت میں 13فیصد کا اضافہ ہوا ہے جس کی مالیت 192.3 بلین ڈالر رہی۔ امریکی محکمہ خارجہ نے ہر ملک کو فروخت کئے گئے اسلحے کی تفصیل کو ظاہر نہیں کیا ۔ ایک دوسرے بیان میں امریکی محکمہ خارجہ نے اسلحہ کی برآمدات میں اضافے کو ٹرمپ انتظامیہ کی نئی پالیسی سے منسوب قراردیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں