Acidic incident in sargoda 83

سرگودھا : بچی پر تیزاب پھینکنے کا واقعہ، مبینہ ملزم پیر عزیز گرفتار

سرگودھا (عثمان بریار)علاقے میانی کے گائوں چک سیدا میں تیزاب گردی کا واقعہ، پولیس نے پیر کو حراست میں لے کر تحقیقات شروع کر دیں، سرگودھا کے نواحی علاقے چک سیدا میں عزیر نامی پیر کے پاس رہائش پذیر ماریہ نامی بچی گذشتہ 9 سال سے رہائش پذیر تھی، بچی کو اس پیر نے اپنی لے پالک بیٹی بنا رکھا تھا، پولیس ذرائع کے مطابق دو سال قبل بچی کا چہرہ تیزاب کے باعث بری طرح سے جھلس گیا، تاہم بچی اور اس کے والدین کی طرف سے کسی قسم کی کاروائی عمل میں نہیں لائی گئی، چند روز قبل جب پولیس کو واقعہ کا علم ہوا تو پولیس نے تحقیقات کا آغاز کیا، تحقیقات کے دوران بچی کے والدین کی طرف سے پولیس کو جمع کروائے گئے بیان حلفی کے مطابق متاثرہ بچی اصغر نامی نوجوان سے پسند کی شادی کرنا چاہتی تھی تاہم شادی سے انکار پر اس نے اپنے اوپر خود ہی تیزاب پھینک لیا، تاہم سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی بچی کے والدین کی ویڈیو میں بچی کے والدین نے الزام عائد کیا ہے کہ پولیس نے بیان حلفی پر ان سے زبردستی دستخط لیئے ہیں۔ تھانہ میانی پولیس ذرائع کے مطابق عذیر نامی پیر کو حراست میں لے کر تفتیش کے لیے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا گیا ہے اور جلد ہی اسے عدالت میں پیش کر کے اس کا ریمانڈ حاصل کیا جائے گا۔دوسری جانب گجرات تیزاب گردی کا شکار ہونے والی ماریہ کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے پر وزیراعلیٰ پنجاب کا نوٹس ڈنگہ، بھلیسرانوالہ متاثرہ لڑکی کے گھر ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب ڈاکٹر شہباز گل پہنچے۔ لڑکی کے والدین سے ملاقات کی اور ان کو انصاف کی جلد فراہمی کی یقین دہانی کرائی۔ متاثرہ لڑکی کے علاج معالجہ سمیت دیگر معاملات کے اخراجات پنجاب حکومت برداشت کرے گی، ڈاکٹر شہباز گل واقع دو سال قبل چک سیدا تھانہ میانی پیش آیا تھا،تاحال مقدمہ درج نہ ہو سکامعاملات کی انکوائری کے بعد ریاست یا متاثرہ لڑکی کے والد کی مدعیت میں مقدمہ درج کیا جائے گا۔متاثرہ 22 سالہ ماریہ کا جسم، چہرہ اور نازک اعضاء مکمل طور پر جھلس چکے ہیں ہم نے ماریہ کو بذریعہ پولیس برآمد کیا، پولیس نے با اثر پیر کی حمایت میں ہم سے کئی کاغزات پر دستخظ کروائے اور پیسے دیکر خاموش کروانے کی کوشش کی متاثرہ لڑکی کے گھر کے باہر سیکیورٹی کے لیے پولیس تعینات سخت سیکیورٹی میں لاہور منتقل کر دیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں