11 12

مصر میں طلاق کے بڑھتا رجحان روکنے کیلئے نوجوانوں‌کی”ڈرامے ” کے ذریعے تربیت

قاہرہ :’یہ گھر کی کیا حالت بنا رکھی ہے، گندگی کا ڈھیر لگ رہا ہے،شام کا کھانا کیوں تیار نہیں؟‘‘’’میں کام پر جاتی ہوں، بچوں کو سنبھالتی ہوں، کھانا تیار ہونے میں ابھی وقت ہے۔‘‘یہ ڈائیلاگز کسی فلم یا ٹی وی ڈرامے کے نہیں بلکہ مصر کی یونیورسٹی میں پرفارم کیے جانے والے ڈرامے کے ہیں۔قاہرہ یونیورسٹی میں جیون ساتھی کے انتخاب اور بہترین ازدواجی زندگی کے حوالے سے شعور پیدا کرنے کے لیے ’ماوادا‘ نامی ڈرامہ پیش کیاجارہا ہے۔برطانوی خبررساں ادارے رائٹرز کے مطابق ’ ماوادا‘ دراصل سرکاری منصوبے کا حصہ ہے جس کا مقصد مصر میں طلاق کی شرح کو کم کرنا ہے۔واضح رہے کہ حالیہ برسوں کے دوران مصر میں طلاق کے رجحان میں غیرمعمولی اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔سال 2017 کے دوران طلاق کی شرح میں 3.2 فیصد اضافہ ہوا۔ اعدادوشمار کے مطابق مصر میں 2017 کے دوران ایک لاکھ 98 ہزار طلاقیں ہوئیں۔’ماوادا‘ نامی یہ ڈرامہ ابھی ابتدائی مراحل میں ہے لیکن حکومت 2020 کے بعد سے سالانہ آٹھ لاکھ نوجوانوں کو ازدواجی زندگی کے حوالے سے باشعور کرنا چاہتی ہے۔یونیورسٹیوں کے طلبا کے لیے ڈگری مکمل کرنے سے قبل اس کی کلاسسز لینا لازمی قرار دے دیا جائے گا۔ ’ماوادا‘ کا پیغام یوٹیوب ویڈیوز، ریڈیو پروگرام کے ذریعے دیا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں