open measuaim 20

سعودی عرب کا کھلے آسمان تلے قائم قدرتی عجائب گھر

ریاض :سعودی عرب کے شمال مغرب میں واقع ابوراکہ بحر احمر کے ساحل پرکھلا قدرتی عجائب گھر ہے، جہاں ہزاروں برس قدیم تہذیب و تمدن کےآثار پائے جاتے ہیں۔ یہ تبوک صوبے کی الوجہ کمشنری میں واقع ہے۔ابوراکہ میں پائے جانے والے آثار قدیم تہذیب و تمدن کا پتہ دے رہے ہیں۔ محقق علی بن سلیمان البلوی نے سعودی پریس ایجنسی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا البلوی کا کہناہے کہ ابو راکہ کے مقام پر دادانی، لحیانی، سمودی ، رومانی اور اسلامی دور کے نقوش بکثرت پائے جاتے ہیں۔چٹانوں کے نقوش اور تحریریں جزیرہ نمائے عرب میں اسلامی عرب تہذیب و تمدن کے مطالعے کا اہم ذریعہ ہیں۔
دراصل یہ علاقہ قدیم زمانے سے حاجیوں کی شاہراہ پر واقع رہا ہے۔ اسلام کی آمد سے قبل بھی خانہ کعبہ کے طواف اور حج کا رواج تھا۔ اس زمانے میں مختلف مذاہب سے تعلق رکھنے والے قبائل حج کےلیے مکہ آتے وقت یہاں سے گزرتے تھے۔البلوی نے بتایا کہ الجزل کے علاقے میں شتر مرغ اور اس کے شکار کے طریقے، عرب نژاد ہرن ، بیلوں، چیتوں، شیروں، سانپوں کے نقوش بڑی تعداد میں پائے جاتے ہیں۔ علاوہ ازیں، اونٹوں ، پہاڑوں اور گھوڑوں کی شکلیں بھی چٹانوں پر بنی ہوئی ہیں جبکہ اس علاقے میں ہونے والی جنگوں کی کہانی بھی تصاویر مرتسم کرکے بیان کی گئی ہیں۔
یہاں قلعوں، گھڑ سواروں اور تیروں کے نقوش بھی بنے ہوئے ہیں۔ یہ سارے نقوش ظاہر کرتے ہیں کہ یہ علاقہ قافلوں کی اہم گزر گاہ تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں