pakistan all grains 122

گذشتہ چھ سال کے دوران غذائی اجناس کا تجارتی خسارہ 4.75 ارب ڈالر

اسلام آباد:گذشتہ چھ سال کے دوران غذائی اجناس کا تجارتی خسارہ 4.75ارب ڈالر رہا ہے ۔ ادارہ برائے شماریات پاکستان (پی بی ایس) کے اعداد و شمار کے مطابق مالی سال 2013ءتا2018ءکے دوران غذائی اجناس کی برآمدات 26.44 ارب ڈالر رہی ہیں جبکہ اس دوران درآمدات کا حجم 31.19ارب ڈالر رہا ہے۔ اس طرح چھ سال کے دوران غذائی اجناس کی درآمدات و برآمدات کے باعث ملک کا تجارتی خسارہ 4.75ارب ڈالر رہا ہے ۔ پی بی ایس کے مطابق مالی سال 2013ءکے دوران 4.19 ارب ڈالر کی درآمدات اور4.75ارب ڈالر کی برآمدات کی گئیں جبکہ تجارتی توازن پاکستان کےحق میں تھا جو 570ملین ڈالر رہا ہے۔ اس طرح مالی سال 2014کیلئے 4.24 ارب ڈالرکی درآمدات اور4.62ارب ڈالر کی برآمدات کی گئیں اور 380 ملین ڈالر کا تجارتی توازن پاکستان کے حق میں تھا جبکہ مالی سال 2015کیلئے5.03 ارب ڈالر کا تجارتی خسارہ ہوا۔مالی سال 2016کے دوران تجارتی خسارہ 1.40ارب ڈالرتک بڑھ گیااوردوران سال 3.99 ارب ڈالرکی برآمدات کے مقابلہ میں درآمدات کا حجم 5.39ارب ڈالر کی ریکارڈ سطح تک بڑھ گیا اوردوران سال 3.71ارب ڈالرکی برآمدات کےمقابلہ میں 6.14 ارب ڈالرکی درآمدات کی گئیں جبکہ گذشتہ مالی سال 2018کے دوران تجارتی خسارہ 1.40ارب ڈالر تک کم ہوگیا اور اس دوران 6.20ارب ڈالر کی درآمدات کےمقابلہ میں4.80ارب ڈالر کی برآمدات کی گئیں۔پی بی ایس کے مطابق گذشتہ چھ سال کےدوران غذائی اجناس کی قومی تجارت(درآمدوبرآمد) کےتجارتی حجم میں اضافہ کا رجحان رہاتاہم گذشتہ مالی سال کےدوران اس میں کمی واقع ہوئی ہے۔رپورٹ کےمطابق رواں مالی سال2018-19میں جولائی تانومبر کے دوران تجارتی خسارہ 960ملین ڈالررہا ہے اس دوران 1.51ارب ڈالر کی برآمدات کے مقابلہ میں 2.47ارب ڈالر کی درآمدات کی گئیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں