sri lanka anti muslim riots 15

سری لنکا میں مسلمانوں پرحملے،9مساجد نذرآتش،دکانیں اورکاروبار تباہ، ملک بھر میں رات کا کرفیو نافذ

کولمبو:۔سری لنکا میں مسلمانوں پر حملوں میں تیزی آگئی۔بین اکاقوامی خبررساں ادارے کے مطابق پر تشدد واقعات میں ایک مسلمان شخص کو چاقو مار کر ہلاک کردیا گیا جبکہ مسلمانوں کی املاک اوردکانوں کو نذر آتش کرنے کے ساتھ مساجد کی بےحرمتی کی گئی۔پولیس نے اس معاملےمیں 60 افراد کوگرفتار کیا ہے جس میں بودھ مذہب کے انتہائی دائیں بازو کے گروپ کے رہنما بھی شامل ہیں۔اقوام متحدہ نے امن قائم رکھنے اور ‘نفرت کو مسترد کرنے’ کی اپیل کی ہے۔پولیس نے کہا شمال مغربی صوبےمیں جہاں خطرناک قسم کا تشدد پھوٹ پڑا تھا ۔مقامی وقت کے مطابق رات نو بجے کے بعد کرفیونافذ کر دیا گیا۔ پولیس کا یہ بھی کہنا ہے کہ وہاں دیر تک کرفیو قائم رہے گا۔گزشتہ 8 گھنٹوں کے دوران بلوائیوں نے 9 مساجد شہید کردیں، 30 دیہات میں مسلمانوں کی دکانیں اور کاروبار تباہ کردیئے گئے، گھروں میں گھس کرمسلمان خاندانوں کو تشدد کا نشانہ بنایا گیا، پتھرائواور فائرنگ سے ایک مسلمان شہید اور متعدد زخمی ہوگئے۔سری لنکا کے مشرقی شہر چلوا سے شروع ہونیوالے مسلم کش فسادات نے دیکھتے ہی دیکھتے پورے شمالی کولمبو کو لپیٹ میں لے لیا، مسلمانوں نے پولیس اسٹیشنز میں پناہ لی، شہر میں مکمل اور ملک بھر میں رات کا کرفیو نافذ کردیا گیا جبکہ حکومت نے سوشل میڈیا پر بھی پابندی عائد کردی ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں