UMT 1,133

یو ایم ٹی کی جعل سازی پکڑی گئی، جعلی رینکنگ پر50لاکھ جرمانہ، ہزاروں طلبہ کا مستقبل داﺅ پر لگ گیا

لاہور: رینکنگ کی دوڑ نے جہاں بہت سے اداروں کا وقارمجروح کیا، وہیں تعلیمی اداروں کی ساکھ کو بھی شدید نقصان پہنچایا ہے ۔ اسی طرح کی ایک جعل سازی پاکستان کے ایک معروف تعلیمی ادارے یونیورسٹی آف مینجمنٹ اینڈ ٹیکنالوجی (یو ایم ٹی) کی طرف سے بھی کئے جانے کا انکشاف ہوا ہے ۔تفصیلات کے مطابق کمپیٹشن کمیشن پاکستان(سی سی پی) نے والدین اور طلبہ کوانتباہ جاری کیا ہے کہ یوایم ٹی کا جنوبی ایشیا میں ٹاپ 10اور ایچ ای سی کی رینکنگ میں دوسرے نمبر پرہونے کا دعویٰ من گھڑت اور جھوٹا ہے۔جس کا حقیقت سے کوئی تعلق نہیں ہے۔سی سی پی کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیہ کے مطابق یونیورسٹی آف مینجمنٹ اینڈ ٹیکنالوجی (یو ایم ٹی) کوجنوبی ایشیا میں اپنے ادارے کی جعلی رینکنگ جاری کرنے پر 50لاکھ جرمانہ کیا گیا ہے۔ اعلامیہ میں مزید بتایا گیا ہے کہ یوایم ٹی کا یہ اقدام آئین کے آرٹیکل 10کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے ۔سی سی پی نے یوایم ٹی کی جانب سے جعل سازی پر انکوائری کمیٹی بنا دی ہے اورعوام کو گمراہ کن معلومات دینے والوں کیخلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جارہی ہے ۔جن کا مقصد لوگوں کو اپنی طرف متوجہ کرا کرزیادہ سے زیادہ طلبہ کے داخلے کرکے والدین سے کروڑوں روپے فیسوں کی مد میں وصول کرنا تھا ۔ یو ایم ٹی کی جعل سازی سے ہزاروں طلبہ کا مستقبل داﺅ پر لگ گیا ہے اور ادارے کے گمراہ کن اقدامات نے اعلیٰ رینک کے ادارے میں اپنے بچوں کو بھیجنے والے والدین کو مایوس کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں