مالی سال2021-22کے وفاقی بجٹ میں پی ایس ڈی پی 900ارب روپے رکھے جانے کی تجویز

اسلام آباد(جرات نیوز) وفاقی حکومت نے آئندہ مالی سال2021-22کے بجٹ میں وفاقی ترقیاتی بجٹ (پی ایس ڈی پی)900ارب روپے رکھنے کی تجویز ہے،جس میں 800ارب حکومت جبکہ 100ارب بیرونی امداد سے خرچ کئے جائیں گے، آئندہ مالی سال کا وفاقی ترقیاتی بجٹ رواں مالی سال کی نسبت 38فیصد زیادہ رکھا گیا ہے، بجلی کے ترسیلی منصوبوں پر 100ارب روپے،نیشنل ہائی وے اتھارٹی (این ایچ اے)کیلئے113.95ارب ، کیبنٹ ڈویژن کے ترقیاتی بجٹ کیلئے 56.06ارب،ہائر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ای سی)کیلئے37 ارب، فیڈرل ایجوکیشن کیلئے 9ارب 70کروڑ، داخلہ ڈویژن کیلئے 22.1ارب،ترقی ومنصوبہ بندی ڈویژن کیلئے 99.251ارب، اورریلوے ڈویژن کے ترقیاتی بجٹ کیلئے 30ارب روپے رکھے گئے ہیں۔بجٹ دستاویزات کے مطابق ایوی ایشن ڈویژن کے ترقیاتی پروگرام کیلئے 4.9ارب،بورڈ آف انویسمنٹ کے ترقیاتی بجٹ کیلئے122.9ملین، کیبنٹ ڈویژن کے ترقیاتی بجٹ کیلئے 56.06ارب،موسمیاتی تبدیلی ڈویژن کیلئے14.27ارب،کامرس ڈویژن کیلئے 300ملین،مواصلات ڈویژن کیلئے451ملین، دفاع ڈویژن کیلئے 1325ملین،دفاعی پیداوار ڈویژن کیلئے1745ملین، اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کیلئے 500ملین، وفاقی تعلیم وپیشہ ورانہ تربیت ڈویژن کیلئے 9.19ارب، خزانہ ڈویژن کیلئے94.64ارب،ایچ ای سی کیلئے37 ارب ،ہاؤسنگ اینڈ ورکس ڈویژن کیلئے 14.94ارب ، انسانی حقوق ڈویژن کیلئے 225.6ملین،صنعت وپیداوار ڈویژن کیلئے 3.06ارب، اطلاعات ونشریات ڈویژن کیلئے1.84ارب ،انفارمیشن ٹیکنالوجی وٹیلی کام ڈویژن کیلئے 8 ارب ، بین الصوبائی رابطہ ڈویژن کیلئے2.56ارب ، داخلہ ڈویژن کیلئے 22.1ارب، کشمیر افیئراینڈ گلگت بلتستان ڈویژن کیلئے 61.812ارب ،قانون وانصاف ڈویژن کیلئے 6ارب ،میری ٹائم افیئرز ڈویژن کیلئے 4.94ارب،انسداد منشیات ڈویژن کیلئے 336ملین روپے رکھے گئے ہیں۔ بجٹ دستاویزات کے مطابق نیشنل فوڈ سیکیورٹی اینڈ ریسرچ ڈویژن کے ترقیاتی بجٹ کیلئے 12 ارب ،قومی صحت ڈویژن کیلئے 22.82ارب،قومی ورثہ اینڈ کلچر ڈویژن کیلئے 45.9ملین، پاکستان اٹامک انرجی کمیشن کیلئے 30ارب ، پاکستان نیوکلیرریگولیٹری اتھارٹی کیلئے 200ملین، پیٹرولیم ڈویژن کیلئے 3.07ارب ، ترقی ومنصوبہ بندی ڈویژن کیلئے 99.251ارب، تخفیف غربت وسماجی تحفظ کیلئے118ملین، ریلوے ڈویژن کیلئے 30ارب ، مذہبی امور ڈویژن کیلئے 502ملین، ریونیو ڈویژن کیلئے4.07ارب ، سائنس اینڈ ٹیکنالوجی ریسرچ ڈویژن کیلئے8.11ارب جبکہ سپارکو کے ترقیاتی بجٹ کیلئے 7 ارب روپے مختص کئے گئے ہیں۔بجٹ دستاویزات کے مطابق آبی ذخائر ڈویژن کیلئے110ارب روپے رکھے گئے ہیں، دیامر بھاشا، داسو اور مہمند ڈیمز کے منصوبوں پر 84ارب 50کروڑ خرچ کیے جانیکی تجویز ہے۔اس کے علاوہ کے فور، نئی گاج ڈیم، رینی کینال اور سندھ میں چھوٹے ڈیموں پر 25ارب روپے خرچ کرنیکی تجویز ہے۔نیشنل ہائی وے اتھارٹی (این ایچ اے)کے ترقیاتی بجٹ کیلئے113.95ارب ، این ٹی ڈی سی کے ترقیاتی بجٹ کیلئے 63 ارب روپے رکھے گئے ہیں۔ سکھر حیدرآباد موٹروے اور خیبر پاس اقتصادی راہدری منصوبے کیلئے 13ارب روپے رکھنے کی تجویز ہے، ملک بھر میں 3261کلومیٹر نئی سڑکیں تعمیر کرنے کی تجویز ہے،ترقیاتی بجٹ میں سکھر حیدرآباد موٹروے کیلئے 4ارب 60کروڑ روپے رکھنے کی تجویز ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں