یونیورسٹی سے نکالے جانے والے جوڑے نے شادی کرلی

لاہور کی ایک یونیورسٹی میں ایک دوسرے کو کھلے عام شادی کی پیشکش کرنے پر یونیورسٹی سے نکالے جانے والے جوڑے نے شادی کرلی ہے۔ سوشل میڈیا پر ’جنگ لاہور‘ کی ایک خبر زیرگردش ہے جس میں کہا گیا ہے کہ یونیورسٹی میں اظہار محبت کی بنا پر نکالے جانے والا جوڑا رشتۂ ازدواج میں منسلک ہو گیا۔

اس خبر کو اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر شیئر کرتے ہوئے لڑکے اور لڑکی دونوں نے جزاک اللہ لکھا جس سے تصدیق ہوتی ہے کہ دونوں باضابطہ طور پر شادی کرلی ہے۔ اس سے قبل حدیقہ اور شہریار نے اپنے اپنے اکاؤنٹ سے ’الحمداللہ‘ کا ٹوئٹ بھی سامنے آیا تھا۔ گزشتہ دنوں لاہور کی نجی یونیورسٹی میں لڑکی لڑکے کی پروپوزل کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سوشل میڈیا پر نئی بحث شروع ہو گئی تھی۔ سوشل میڈیا پر متعدد صارفین کی جانب سےانہیں تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا تھا جب کہ متعدد معروف شخصیات کی جانب سے ان کی حمایت بھی کی گئی۔ اس حوالے سے سوشل میڈیا پر تنقید کی زد میں آنے والے لڑکے شہریار کا لڑکی کی حمایت میں بیان سامنے آیا تھا۔ نوجوان نے ناقدین سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ لڑکی معصوم ہے لہذا اس کی تصاویر یوں سوشل میڈیا پر وائرل نہ کی جائیں۔ شہریار نے لکھا کہ ’لڑکی کے کردار کے بارے میں کوئی بات نہ کریں کیونکہ اس سے اسے اور اس کے اہل خانہ کو اذیت پہنچے گی ، وہ پہلے ہی پریشان ہیں اور اپنی بیٹی کے بارے میں فکر مند ہیں۔ ‘

اپنا تبصرہ بھیجیں